وضو کرتے وقت چہرے اور ہاتھوں کو صابن سے دھونا

 از    January 2, 2018

فتویٰ : شیخ محمد بن صالح عثیمین حفظ اللہ

سوال : وضو کرتے وقت چہرے اور ہاتھوں کو صابن سے دھونے کا کیا حکم ہے؟
جواب : وضو کرتے وقت چہرے اور ہاتھوں کو صابن سے لازماً دھونا غیر مشروع ہے۔ یہ محض ایک تکلف ہے۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد گرامی ہے:
هلك المتنطعون، هلك المتنطعون [رواه مسلم فى كتاب العلم]
”تکلف کرنے والے ہلاک ہو گئے’ تکلف کرنے والے ہلاک ہو گئے۔“
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ بات تین دفعہ دھرائی۔ ہاں اگر ہاتھوں پر ایسی میل کچیل جمی ہو (یا ناگوار بدبو ہو) جو صابن وغیرہ استعمال کئے بغیر زائل نہ ہو سکے تو اسے استعمال کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ عام حالات میں اس کا استعمال محض تکلف اور بدعت ہوگا۔ لہٰذا اسے استعمال نہیں کرنا چاہیے۔

نئے مضامین بذریعہ ای میل حاصل کیجیے

تمام مضامین

About Tohed.com

Tohed.com is an Urdu Islamic Website, aiming to preach true Islamic Information based on Qur'an and Sunnah. Here you can find out hundreds of urdu articles by reputed scholars. It's a completely non-commercial project with an objective to propagate Information about Islam in native language for the sub-continent readers.