نماز ظھر کا وقت

 از    September 1, 2014

تحریر:حافظ زبیر علی زئی

عن أنس بن مالک قال: کنا إذا صلینا خلف رسول اللہ ﷺ بالظھائر سجدنا علی ثیابنا اتقاء الحرانس بن مالکؓ سے روایت ہے کہ :جب ہم رسول اللہ ﷺ کے پیچھے ظہر کی نمازیں پڑھتے تھے تو گرمی سے بچنے کے لئے اپنے کپڑوں پر سجدہ کرتے تھے۔(صحیح البخاری: ۷۷/۱ ح ۵۴۲، واللفظ لہ و  صحیح مسلم: ۲۲۵/۱ ح ۲۲۰)

فوائد:
۱:اس روایت اور دیگر احادیث صحیحہ سے ثابت ہوتا ہے کہ نمازِ ظہر کا وقت زوال کے ساتھ شروع ہوجاتا ہے، اور ظہر کی نماز اول وقت پڑھنی چاہئے ۔
۲:        اس پر اجماع ہے کہ ظہر کا وقت زوال کے ساتھ شروع ہوجاتا ہے ۔ (الافصاح لابن ہبیرۃ: ج۱ ص ۷۶)
۳:       جن روایات میں آیا ہے کہ جب گرمی زیادہ ہوتو ظہر کی نماز ٹھنڈے وقت میں پڑھا کرو ان تمام احادیث کا تعلق سفر کے ساتھ ہے جیسا کہ صحیح البخاری (ج ۱ ص ۷۷ ح ۵۳۹) کی حدیث سے ثابت ہے، حضر (گھر، جائے سکونت) کے ساتھ نہیں۔ جو حضرات سفر والی روایات کو حدیث بالا وغیرہ کے مقابلہ میں پیش کرتے ہیں، ان کا موقف درست نہیں۔ انہیں چاہئے کہ یہ ثابت کریں کہ نبیﷺ نے مدینہ منورہ میں ظہر کی نماز ٹھنڈی کر کے پڑھی ہے ۔ !؟
۴:       ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ:
          “جب سایہ ایک مثل ہوجائے تو ظہر کی نماز ادا کرو اور جب دو مثل ہوجائے تو عصر پڑھو۔”(موطا امام مالک: ۸/۱ ح ۹)
          اس کا مطلب یہ ہے کہ ظہر والی نماز زوال سے لے کر ایک مثل تک پڑھ سکتے ہیں، یعنی ظہر کا وقت زوال سے لے کر ایک مثل تک ہے اور عصر کا وقت ایک مثل سے لے کر دو مثل تک ہے ۔ مولوی عبدالحئی لکھنوی نے التعلیق الممجد (ص ۴۱ حاشیہ۹) میں اس موقوف اثر کا یہی مفہوم لکھا ہے ، یہاں بطورِ تنبیہ عرض ہے کہ اس “اثر” کے آخری حصہ “فجر کی نماز اندھیرے میں ادا کر” کی دیوبندی اور بریلوی دونوں فریق مخالفت کرتے ہیں، کیونکہ یہ حصہ ان کے مذہب سے مطابقت نہیں رکھتا ۔

۵:       سُوید بن غفلہؒ نماز ظہر اول وقت ادا کرنے پر اس قدر ڈٹے ہوئے تھے کہ مرنے کے لئے تیار ہوگئے ، مگر یہ گوارا نہ کیا کہ ظہر کی نماز تاخیر سے پڑھیں اور لوگوں کو یہ بتایا کہ ہم ابوبکر و عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہما کے پیچھے اول وقت میں نمازِ ظہر ادا کرتے تھے۔ (مصنف ابن ابی شیبہ : ۳۲۳/۱ ح  ۳۲۷۱)

نئے مضامین بذریعہ ای میل حاصل کیجیے

ٹویٹر پر فالو کیجیے

تمام مضامین

About Tohed.com

Tohed.com is an Urdu Islamic Website, aiming to preach true Islamic Information based on Qur'an and Sunnah. Here you can find out hundreds of urdu articles by reputed scholars. It's a completely non-commercial project with an objective to propagate Information about Islam in native language for the sub-continent readers.