طارق بن زیاد کا کشتیاں جلانے کا من گھڑت واقعہ

 از    October 10, 2014

بعض جھوٹے قصے عوام الناس میں مشہور ہیں مثلاً:
۱:        خنساء بنت عمروؓ کے بارے میں مشہور ہے کہ جنگِ قادسیہ میں اُن کے چار بیٹے شہید ہوگئے تھے۔
یہ قصہ محمد بن الحسن بن زبالہ نے بیان کیا ہے ، دیکھئے الاصابہ (۲۸۸/۴) ابن زبالہ کے بارے میں امام یحییٰ بن معین نے فرمایا :”وکان کذاباً” اور وہ جھوٹا تھا ۔(تاریخ ابن معین روایۃ الدوری : ۱۰۶۰)
ابن معین نے مزید فرمایا :”عَدُوُّ اللہِ“یہ اللہ کا دشمن ہے ۔(الجرح و التعدیل ۲۲۸/۷و سندہ صحیح) اور فرمایا :”وَکَانَ یَسْرِقُ الْحَدِیْث” اور یہ حدیثیں چوری کرتا تھا ۔(التاریخ الکبیر للبخاری ۶۷/۱ ت ۱۵۴ و سندہ صحیح)
معلوم ہوا کہ یہ روایت موضوع ہے۔
۲:        بعض لوگوں میں مشہور ہے کہ طارق بن زیاد نے جب اسپین (اندلس) پر حملہ کیا تھا تو کشتیاں جلانے کا حکم دے کر کشتیاں جلا ڈالی تھیں۔ کشتیاں جلانے والا یہ سارا قصہ جعلی اور من گھڑت ہے۔
دیکھئے “کتب أخبار رجال أحادیث تحت المجھر” (ص۱۷۔۱۹)

نئے مضامین بذریعہ ای میل حاصل کیجیے

ٹویٹر پر فالو کیجیے

تمام مضامین

About Tohed.com

Tohed.com is an Urdu Islamic Website, aiming to preach true Islamic Information based on Qur'an and Sunnah. Here you can find out hundreds of urdu articles by reputed scholars. It's a completely non-commercial project with an objective to propagate Information about Islam in native language for the sub-continent readers.